دبئی نے کھانے کی ترسیل کے لئے فوڈ ڈیلیوری روبوٹ متعارف کروا دیئے۔

دبئی انٹیگریٹڈ اکنامک زونز اتھارٹی (DIEZ) اور فوڈ ڈیلیوری سروس طلبات (Talabat)، ‘Talabots’ نامی فوڈ ڈیلیوری روبوٹ لانچ کرنے کے لیے روڈز اینڈ ٹرانسپورٹ اتھارٹی (RTA) کے ساتھ شراکت داری کر رہے ہیں۔ ابتدائی طور پر، ان کا ٹیسٹ ایک ٹیکنالوجی پارک دبئی سلیکون اوئسیس (DSO) کے کیڈرے ولاز (Cedre Villas) میں کیا جائے گا۔

تین روبوٹس کو کیڈرے شاپنگ سینٹر کے 3 کلومیٹر کے دائرے میں سفر کرتے ہوئے گیٹڈ کمیونٹی کے رہائشیوں کی خدمت کے لیے متعارف کرایا جائے گا۔ روبوٹس 15 منٹ سے کم وقت میں کھانا پہنچا سکیں گے۔

طلا بوٹس (Talabots) کا آغاز دبئی کی تکنیکی ترقی کو ظاہر کرتا ہے۔ اس اقدام سے فوڈ ڈیلیوری روبوٹ کے استعمال کو مرکزی دھارے میں لانے کی توقع ہے، کیونکہ دنیا بھر کے شہر اس ابھرتی ہوئی ٹیکنالوجی کے ممکنہ فوائد کو تلاش کر رہے ہیں۔

اس کے علاوہ، ورلڈ گورنمنٹ سمٹ 2023 کے دوران، متحدہ عرب امارات کے نائب صدر شیخ محمد بن راشد المکتوم نے دبئی میں نئے ایئر ٹیکسی اسٹیشنوں کے ڈیزائن کی منظوری دی۔

انہوں نے ٹویٹ کیا کہ دبئی میں 3 سال کے اندر ایئر ٹیکسیاں کام کرنا شروع کر دیں گی، یہ دنیا کا پہلا شہر بن جائے گا جس میں ورٹی پورٹس، عمودی ٹیک آف اور لینڈنگ ہب کا مکمل طور پر تعمیر شدہ نیٹ ورک ہو گا۔

تبصرہ کریں

%d