بین الاقوامی روبوٹک مقابلے میں کراچی کے طلباء نے چوتھی پوزیشن حاصل کرلی۔

کینیڈا میں منعقدہ بین الاقوامی روبوٹک مقابلے میں کراچی کے تین طلباء اپنی صلاحیتوں اور روبوٹک سینس کا مظاہرہ کرکے چوتھی پوزیشن حاصل کرنے میں کامیاب ہوگئے ہیں۔

رہائشی آگ کے پراجیکٹ کو گریڈ 7 ، 8 اور 10 کے طلباء نے تیار کیا ہے۔ طلباء کے نام ابراہیم، برہان الدین ​​اور مستنصر ہیں۔ یہ پراجیکٹ اسکول کے طلباء نے دو ہفتوں میں مکمل کیا۔

پاکستانی نیوز چینل سے گفتگو کرتے ہوئے، ابراہیم، برہان الدین ​​اور مستنسر نے کہا کہ "انہوں نے حال ہی میں کینیڈا میں منعقدہ ورلڈ روبوٹک اولمپیا (ڈبلیو آر او) میں حصہ لیا تھا، جہاں انہیں موسمیاتی تبدیلی کے معاملے پر کام کرنے کی ذمہ داری سونپی گئی تھی۔ دنیا میں جنگل کی آگ کے بڑھتے ہوئے واقعات کو مدنظر رکھتے ہوئے، انہوں نے ایک ایسا روبوٹک پراجیکٹ بنانے کا فیصلہ کیا جو آگ کو روکنے میں معاون ثابت ہو۔”

طلباء کے مطابق، روبوٹک پراجیکٹ کی تیاری کا مقصد آگ بجھانے میں مدد کرنا ہے۔ اس پراجیکٹ میں چار روبوٹ ہیں۔ جب بھی آگ لگتی ہے، روبوٹک اسپرنٹر مشین الارم سے خبردار کرتی ہے۔ دوسری مشینیں اس پر قابو پانے کے لئے آگ پر پانی پھینکتی ہیں جبکہ ایک اور روبوٹک پروگرام کاربن ڈائی آکسائیڈ کو قابو کرے گا اور اسے جیو پاور تھرمل پلانٹ میں منتقل کرے گا۔ وہاں یہ فیریک میں تبدیل ہوجائے گا (یہ آگ لگنے کے واقعے کے بعد متاثرہ عمارت یا سائٹ کو مکمل طور پر منہدم کرنے سے بچانے میں مدد کرتا ہے)۔

طلباء کے استاد جناب حسین نے کہا کہ یہ بچے پاکستان کا مستقبل ہیں۔ انہوں نے ان کی ناقابل یقین ایجاد کی بھی تعریف کی۔

تبصرہ کریں

%d bloggers like this: