فیس بک اپنے پلیٹ فارم سے کوویڈ-19 کی ویکسین سے متعلق سازشی تھیوریوں کو ختم کرنا شروع کررہا ہے۔

پچھلے کچھ مہینوں کے دوران، فیس بک اپنے پلیٹ فارم سے سازشی نظریات اور جعلی خبروں کو ختم کرنے پر سخت محنت کر رہا ہے۔ اکتوبر میں، اس نے QAnon سے وابستہ گروپوں اور صفحات پر پابندی عائد کرنے کے علاوہ ان پوسٹوں کو بھی روک دیا تھا جنھوں نے ہولوکاسٹ سے انکار کیا تھا اور ایسے اشتہارات پر بھی پابندی عائد کردی تھی جو حفاظتی ٹیکوں (ویکسینیشن) کی حوصلہ شکنی کرتے ہیں۔ کوویڈ-19 ویکسین کے بارے میں حال ہی میں ابھرنے والی خبروں کے ساتھ ، کمپنی ایک قدم اور آگے جارہی ہے اور اب ممکنہ ویکسین سے متعلق جھوٹے دعووں کو بھی اپنے پلیٹ فارم سے ختم کرے گی۔

نئی پالیسی کا اطلاق فیس بک اور انسٹاگرام دونوں پر ہوگا۔ کوویڈ-19 ویکسین سے متعلق کسی بھی جعلی خبر جیسے ان کے اجزاء، کارکردگی اور ضمنی اثرات کو فوری طور پر پلیٹ فارم سے ہٹا دیا جائے گا۔ صحت عامہ کے ماہرین جو ان دعوؤں کو ناکام بناتے ہیں ان کو حقیقت کے منبع کے طور پر استعمال کیا جائے گا۔ کمپنی کا دعوی ہے کہ اس کے ڈیجیٹل پلیٹ فارمز پر بے حد غلط معلومات کی وجہ سے جسمانی نقصان ہوسکتا ہے اسی لئے اس نے یہ اقدام اٹھانے کا فیصلہ کیا ہے۔ انھوں نے مزید کہا کہ:

ہم کوویڈ-19 ویکسین کے بارے میں سازشی نظریات کو بھی ختم کردیں گے جو آج ہم جانتے ہیں کہ یہ جھوٹے ہیں: جیسے مخصوص آبادی ان کی رضامندی کے بغیر ویکسین کی حفاظت کی جانچ کرنے کے لئے استعمال ہورہی ہے۔ ہم ان پالیسیوں کو راتوں رات نافذ کرنا شروع نہیں کرسکیں گے۔ چونکہ یہ شروعات ہے اور کوویڈ-19 ویکسین کے بارے میں حقائق تبدیل ہوتے رہیں گے، لہذا ہم باقاعدگی سے ان دعووں کو اپ ڈیٹ کریں گے جنہیں ہم صحت عامہ کے حکام کی رہنمائی کی بنیاد پر ہٹاتے ہیں جب وہ مزید معلومات حاصل کرتے ہیں۔

جیسا کہ مذکورہ بالا بیان میں اس بات پر روشنی ڈالی گئی ہے کہ یہ ایک تدریجی عمل ہوگا جس میں امید ہے کہ وقت کے ساتھ ساتھ بہتری آئے گی۔ لہذا اگر آپ اس بارے میں سازشی تھیوریوں کو پھیلانا چاہتے ہیں کہ بل گیٹس کس طرح ہمارے جسم میں مائیکرو چیپس لگانے کے لئے ویکسین کا استعمال کریں گے تو بہتر ہو گا کہ آپ فیس بک اور انسٹاگرام کے بجائے کسی اور پلیٹ فارم کا استعمال کریں۔

تبصرہ کریں

%d bloggers like this: