مقامی اے آئی سافٹ ویئر کوویڈ۔19 کی تشخیص کا ایک منٹ میں پتہ لگا سکتا ہے۔

ٹیکنالوجی کے اس دور میں سب کچھ ممکن ہے۔ اس سال کی وبائی بیماری نے بہت سی زندگیوں کو پریشان کیا ہے۔ کوویڈ۔19 نے ہماری روزمرہ کی زندگی کے معمولات کو بدل کر رکھ دیا ہے۔ جب اس وبائی مرض نے دنیا کو متاثر کیا تو اس بیماری کی کھوج میں بہت زیادہ وقت لگا۔ جیسے ہی ہمارے ماہرین نے اس کو سمجھنا شروع کیا، کسی بھی انسان میں اس وائرس کی کھوج لگانے کا وقت بھی کم سے کم ہوتا چلا گیا۔ اسی سلسلے میں نیشنل الیکٹرانکس کمپلیکس آف پاکستان نے ایک ایسا سافٹ ویئر تیار کیا ہے جو "ایک منٹ میں ہی کسی شخص کے پھیپھڑوں میں نوویل کورونا وائرس کا پتہ لگانے کے قابل ہے۔” "کوو-ریڈ (Cov-raid)” ایک مقامی اے آئی سافٹ ویئر ہے جو ایک منٹ میں ہی کوویڈ۔19 کا پتہ لگاسکتا ہے۔

ڈرگ ریگولیٹری اتھارٹی آف پاکستان (ڈی آر اے پی) نے کوو-ریڈ کی منظوری دے دی ہے۔ مزید یہ کہ، سافٹ ویئر کو کوویڈ-19 کا پتہ لگانے کے لئے ایک ان پٹ طور پر سینے کی ایکس رے امیج کی ضرورت ہوتی ہے۔

ڈی آر اے پی کے سی ای او ڈاکٹر عاصم رؤف نے کہا:

کوو-ریڈ کی مقامی ایجاد ایک بڑی کامیابی ہے۔ کوویڈ-19 کے ٹیسٹ کا یہ طریقہ بہت اہم کردار ادا کرے گا۔

عہدیدار کے مطابق یہ ٹیکنالوجی دنیا کے صرف چند ممالک میں دستیاب ہے۔ پاکستان کوو-ریڈ کو دوسرے ممالک کو بھی فراہم کرے گا۔ مزید یہ کہ کوویڈ-19 کے ٹیسٹ کو آسان بنانے کے لئے جلد ہی یہ پورے ملک میں دستیاب ہوگا۔

کوو-ریڈ کو ڈی آر اے پی ایکٹ 2012 کے تحت رجسٹرڈ کیا گیا ہے۔ وہ مشتبہ افراد میں ایکس رے کے ذریعہ کوویڈ 19 کی تشخیص کرنے کے لئے "کونوولیوشنل نیورل نیٹ ورکس کا استعمال کرے گا” اور اس وائرس کی "ثانوی کھوج” کے لئے منظوری دے دی گئی ہے۔

کوو-ریڈ ویب سائٹ کے مطابق، کوویڈ-19 کا پتہ لگانے کے لئے سینے کے ایکس رے ڈیٹا کا ذخیرہ تیار کرکے مصنوعی ذہانت والا سافٹ ویئر تیار کیا گیا ہے۔

ماخذ: ٹریبون

تبصرہ کریں

%d bloggers like this: