پی ٹی اے نے کچھ شرائط کے ساتھ ٹِک ٹاک کی خدمات بحال کردیں۔

پلیٹ فارم پر فحاشی، غیر اخلاقی اور غیر مہذب مواد کی موجودگی اور معاشرے پر اس کے منفی اثرات کے پیش نظر، پی ٹی اے مسلسل اپنے طور پر اس کے پلیٹ فارم کو غیر قانونی مواد کو پھیلانے سے روکنے کے لئے ٹِک ٹاک پر دباؤ ڈال رہا ہے۔ تاہم، غیر قانونی مواد کو مسدود کرنے اور اسے ہٹانے کے لئے ٹھوس اقدامات کرنے پر ٹِک ٹاک ان کو مطمئن نہیں کرسکا۔ لہذا، جب تک اطمینان بخش مواد کی نگرانی کا میکانزم موجود نہیں ہوتا ہے تب تک ٹِک ٹاک کی ایپ پر پابندی عائد کردی گئی تھی۔

پابندی کے نفاذ سے پہلے اور اس کے بعد پلیٹ فارم کے سینئر مینجمنٹ کے ساتھ مستقل بات چیت کے نتیجے میں، ٹِک ٹاک نے معاشرتی اصولوں اور پاکستان کے قوانین کے مطابق اعتدال پسند مواد کی یقین دہانی کرائی ہے اور اس بات کو یقینی بنایا ہے کہ وہ صارفین جو غیر قانونی مواد اپ لوڈ کرنے میں مستقل طور پر ملوث ہیں ان کو پلیٹ فارم پر بلاک کر دیا گیا ہے۔

آج پی ٹی اے نے، انٹرنیٹ پر صارفین کے ڈیجیٹل تجربے اور ڈیجیٹل کمپنیوں کی ترقی کے سہولت کار کے طور پر اس پابندی کو ختم کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ تاہم، ٹک ٹاک کی خدمات کی بحالی اس شرط کے ساتھ سختی سے مشروط ہے کہ پلیٹ فارم کو فحاشی اور بے حیائی کے پھیلاؤ کے لئے استعمال نہیں کیا جائے گا اور معاشرتی اقدار کو غلط استعمال نہیں کیا جائے گا۔ اگر مذکورہ شرط پوری نہ ہوئی تو پی ٹی اے ایپ پر مستقل طور پر پابندی لگانے پر مجبور ہوگا۔

پابندی ہٹانے سے متعلق پی ٹی اے کا آفیشل ٹویٹ ذیل میں ملاحظہ کریں۔

تبصرہ کریں

%d bloggers like this: